Ahlesunnat25

Charity Organization

وہابیوں رافضیوں وغیرہ بدمذاہب کا رد

6:47
گزشتہ دنوں مناظر اسلام مفتی محمد حنیف قریشی صاحب حفظہ اللہ نے ذاکر نائیک ملعون کو اس کی ایک بدترین گستاخی کرنے پر بول چینل پر آکر اسے مناظرے کا چیلنج دیا تھا جس سے تاحال وہ فرار ہے... مفتی صاحب کے چیلنج کے بعد جہاں وہابیت مردہ ہو گئی وہی اندھوں میں کانے راجہ کہلانے والے اور سستی شہرت کے بھوکے دیوبندی مناظر مفتی نجیب اللہ عمر صاحب بھی بیچ میدان میں اپنی کھوٹی عقل کیساتھ دفاع ذاکر نائیک میں کود پڑے اور یہ بھول گئے کہ ذاکر نائیک کیخلاف خود بیسیوں دیوبندی فتاویٰ و بیانات موجود ہیں ہم یہاں تمام دیوبندیوں کے لیئے بالعموم اور نجیب اللہ صاحب کے لیئے بالخصوص اپنے تئیں دیوبندیوں کے مناظر اعظم کہلانے اور اپنی بیٹیوں پر گندی نظر رکھنے کی وجہ سے اپنے ہی فرقے میں بدنام اور بدمعاش شہرت رکھنے والے مولوی الیاس گھمن صاحب کا ایک کلپ اپلوڈ کررہے ہیں اور ہمارا مقصد صرف لوگوں پر یہ واضح کرنا ہے دیوبندیوں کو کوئی شرم و حیا بالکل نہیں ہے ان کے مولوی جس کا رد کرتے ہیں یہ اپنی سستی شہرت کے لیئے اسی بندے کا دفاع کرتے ہیں... ایسے دو نمبر اور جاہل مولویوں سے پرہیز کیجئے اور مفتی نجیب اللہ عمر صاحب سے کہنا چاہتے ہیں کہ اگر تم واقعی مناظرہ کرنے میں سنجیدہ ہو تو مولوی الیاس گھمن دیوبندی کے اصولوں کے مطابق چیلنج مناظرہ کی تحریر لکھ کر دو اور سامنے بیٹھو.... ان شاءاللہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا... ویسے ایک بات کا جواب بھی درکار ہے کہ گھمن صاحب نے جو سرچ اور ریسرچ کی تحقیق کی ہے کیا وہ صحیح ہے؟ ویڈیو دیکھئے اور شیئر کیجئے #ایڈمن
1 year ago
1:13
علمائے دیوبند کے بزرگوں کی کتابوں میں پہلے تو محمد ﷺ کی جگہ محمد ص یا صلعم لکھا جاتا تھا جیساکہ تحذیرالناس میں بھی ہے دیوبندیوں کی عین اسلام و ایمان کتاب تقویة الایمان میں اللّٰہ رب العلمین کو اللّٰہ صاحب کہا گیا اور اب ترقی پا کر معتقدانِ دیوبند باندازِ کافرانہ محمد صاحب کہتے ہیں حدیث پڑھی تو وہ بھی غیر معروف صوفی کی کتاب سے جبکہ صوفی کا نام تک نہ بتایا ہاں اتنا ضرور کہا کہ ” باب الکفے کتاب ہے حضرت دہلوی رحمة اللّٰہ علیہ کی وہ عراق کے تھے اُس میں یہ حدیث کوڈ ہے“ باب الکفے تو نام ہی عجیب تر ہے اور پھر نسبت ذکر کی گئی کہ #حضرت_دہلوی لیکن ساتھ ہی کہا کہ #عراق کے تھے اب نہ معلوم کہ عراق میں بھی کوئی دہلی ہے یا یہ حضرت دہلی سے عراق گئے تھے مگر اتنا ضرور ہے کہ علمائے وہابیہ نے اپنی کئی کتب میں رام و کرشن کی نبوت کا اظہار بیان کیا ہے اور سنا ہے کہ وفاق المدارس کے مشہور مولوی عبدالقوی نے بھی رام و کرشن کے بارے میں ایسا بیان دیا ہے #ملا_قاتل_ابنِ_غازی
2 years ago